بلوچستان لوکل باڈیز الیکشن۔۔ایک مثبت پیش رفت

چند ماہ پہلے تک عام تاثر یہ تھا کہ بلوچستان میں امن و امان کی صورتحال  اور مجموعی سیاسی فضا  اتنی خراب ہو چکی ہے کہ وہاں کے کسی سکول تک میں بھی قومی پرچم لہرانا ممکن نہیں رہا ایسے میں 7 دسمبر کو صوبے بھر میں لوکل باڈیز کے پر امن انتخابات کا انعقاد یقیناً کسی معجزے سے کم نہیں جس کا کریڈٹ  بنیادی طور پہ وزیرِ اعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ ،قانون نافذ کرنے والے اداروں اور الیکشن کمیشن کو جاتا ہے اس کے علاوہ صوبے کے عوام اور مرکزی حکومت  بھی اس شاندار کارنامے کے لئے مبارکباد کی مستحق ہے ۔

اس صورتحال کا جائزہ لیتے مبصرین نے کہا ہے کہ اخباری اطلاعات کے مطابق   بلوچستان کے بلدیاتی انتخابات کے غیر سرکاری و غیر حتمی نتائج کا اعلان کر دیا گیا ہےاور پارٹی پوزیشن میں جے یو آئی (ف) پہلے نمبر پر ہےجبکہ مسلم لیگ(ن) چوتھے نمبر پر ،ٹرن آوٹ45فیصد رہا۔

بلوچستان کے بلدیاتی الیکشن کے نتائج کا اعلان صوبائی الیکشن کمشنر سلطان بایزید نے پر یس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔انہوں نے بتایا کہ 7190نشستوں میں سے 2544 امیدواروں کے بلا مقابلہ منتخب ہونے کے بعد4036 سیٹوں پر پولنگ ہوئی۔ صوبے بھر میں مجموعی طور پر 2675 آزاد امیدوار جیتے۔ سیاسی جماعتوں میں جے یو آئی فضل الرحمان گروپ 964 نشستوں کے ساتھ سرفہرست رہی۔ محمود اچکزئی کی پشتونخواہ میپ 765 سیٹوں کے ساتھ دوسرے جبکہ وزیر اعلی ڈاکٹر عبد المالک کی نیشنل پارٹی 562 سیٹوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر رہی۔ مسلم لیگ ن 472 سیٹوں پر کامیابی حاصل کر سکی ۔ صوبائی الیکشن کمشنر نے بتایا کہ میئر و ڈپٹی میئرز سمیت مخصوص نشستوں پر انتخاب ضمنی الیکشن کے بعد ہو گا۔انھوں نے کہاکہ بلدیاتی انتخابات میں ٹرن آٹ 42 سے 45 فیصد رہا۔

واضح رہے کہ 12 دسمبر کو 1800 بلوچ نو جوانوں کی پاک آرمی میں شمولیت کے موقع پر افواجِ پاکستان کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاک فوج کو فخر ہے کہ گذشتہ 3 برسوں میں 20.000 مزید بلوچ نوجوانوں نے مسلح افواج میں شمولیت اختیار کی  اور یہ امر پوری قوم کے لئے حوصلہ افزا اور خوش آئند ہے اس موقع پہ وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹرعبدالمالک بلوچ نے کہا ہے کہ پاک فوج نے بلوچستان حکومت کے ساتھ مل کر مشکلات کو حل کیا، ہم بلوچستان کو ملک کا سب سے پرامن صوبہ بنائیں گے۔بلوچ رجمنٹ کی پاسنگ آوٹ پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھاکہ اگرچہ اس وقت صوبے  میں بے چینی کی فضا ہے اور امن و امان کی مخدوش صورتحال کے باعث بے شمار مسائل ہیں لیکن حکومت مسائل کے حل کے لئے بھرپور کوشش کرے گی۔

 انہوں نے کہاکہ ملک کی ترقی اور استحکام کے لیے پاک فوج وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے ساتھ شانہ بشانہ مصروف عمل ہے پاک فوج کے ساتھ مل کر صوبے میں پرامن بلدیاتی انتخابات کا انعقاد کرایا گیا، جس پر ہم فوج کے مشکور ہیں۔ پاک فوج نے آواران اور دیگر زلزلہ متاثرہ علاقوں میں امدادی کاروائیوں میں مدد کی۔ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان جغرافیائی طور پر نہایت اہم ہے، آج اسٹریٹجک لحاظ سے دنیا کی نظریں اس پر لگی ہیں۔ سرزمین بلوچستان کےغیورعوام نے ہمیشہ بیش بہا قربانیاں دیں مجھے یقین ہے بلوچستان کی آیندہ نسلیں ماضی اور اپنے آباواجداد کی اعلیٰ روایات کو برقرار رکھیں گی۔ مجھے فخر ہے بلوچستان کے بےباک اور جاں فشاں سپاہیوں کے ساتھ موجود ہوں۔

تجزیہ کاروں نے  رقبے کے لحاظ سے پاکستان کے سب سے بڑے صوبے میں پر امن بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کو ملک و ملت کے لئے انتہائی خوش آئند قرار دیتے ہوئے توقع ظاہر کی ہے کہ انشااللہ اس پیش رفت کے مثبت اثرات  پاکستان کی سلامتی ،اقتصادی اور سیاسی فضا کے لئے ساز گار  ثابت ہوں گے۔

Tags:

About the Author

Post a Reply

Your e-mail address will not be published. Required fields are marked *

Top